We are the largest independent & proactive PTI supporters community

سپریم کورٹ نے ن لیگ کی پاکستان کے خلاف ایک اور سازش ناکام بنا دی ، الیکشن کے تمام امیدوار بیان حلفی میں تمام معلومات فراہم کرنے کے پابند

جب سے الیکشن کے نامزدگی فارم سامنے آئے ہیں تمام پاکستان تشویش کا شکار تھے کیونکہ اس سے باسٹھ تریسٹھ کے ساتھ ساتھ ٹیکس گوشوارے ، دوہری شہریت ، اور دیگر ضروری معلومات نکال دی گئی تھیں۔ یہ کارنامہ ن لیگ نے الیکشن ایکٹ ۲۰۱۷ میں سرانجام دیا تھا۔ یہ وہی ایکٹ تھا جس میں ختم نبوت کی شک بھی ختم کر دی گئی تھی جو کہ بعد ازاں عوام کے شدید ردعمل کے بعد واپس ڈال دی گئی لیکن امیدوار کے لیے باقی تمام ضروری معلومات فراہم کرنے کی شکیں ختم کر دی گئیں ۔

صحافی حضرات اور سول سوسائٹی نے سوشل میڈیا پر اس کے خلاف آواز اُٹھائی کیونکہ اگر یہ تمام شکیں نکال دی جائیں تو جرائم پیشہ مجرموں کو اسمبلی میں آنے سے کیسے روکا جائے گا؟ جس پر لاہور ہائی کورٹ کی جج جسٹس آئشہ نے یہ نیا نامینیشن فارم کلعدم قرار
دے دیا جس پر ن لیگیے الیکشن ٹائم پر ہوں کا واویلا کرتے سپریم کورٹ یہ معاملہ لے گئے۔ سپریم کورٹ نے نیا فارم تو جاری کر دیا لیکن آج انہوں نے تمام امیدواروں کو بیان حلفی جمع کرانے کا حکم جاری کر دیا ہے جس کے مطابق اب کو امیدوار اپنی جائیدار ، ٹیکس، دوہری شہریت نہیں چھپا پائے گا۔ ہم سپریم کورٹ کے اس قدم کا خیر مقدم کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ سیاستدانوں کا کڑا سے کڑا احتساب ہو تاکہ کوئی چور، کوئی ڈاکو اسمبلی میں پہنچ کر مزید اس ملک کو نہ لوٹ سکے۔ شکریہ سپریم کورٹ

انشااللہ کوئی قاتل ، کوئی چور، کوئی لوٹیرا ، کوئی امریکی ایجنٹ اسمبلی نہیں پہنچ پائے گا

Leave a Comment